پانی، زندگی کی ضرورت

Sun, 04/16/2017 - 11:11

چکیده:پانی زندگی کی اہم ترین ضرورتوں میں سے ایک ہے کہ جس کے بنا زندگی کچھ قدم بھی صحیح ڈھنگ سے نہیں چل سکتی۔

پانی، زندگی کی ضرورت

خداوند عالم قرآن مجید میں فرماتا ہے’’ اور ہم نے ہر جاندار کو پانی سے قرار دیا ہے‘‘[1]،  تمام انسان، حیوانات اور نباتات کی زندگی، پانی سے وابستہ ہے۔

نصف سے زیادہ زمین کو پانی گھیرے ہوئے ہے،  انسان کے جسم کی بناوٹ اور  خلقت میں بھی پانی کا خاص دخل ہے۔ امام صادق علیہ السلام سے  پوچھا گیا کہ پانی کا کیا مزہ ہے؟ تو امامؑ نے فرمایا: پانی کا مزہ، زندگی کا مزہ ہے[2]۔  یعنی پانی، لذت حیات ہے۔

اگر ہم کھانا نہ کھائیں تو شاید دو ھفتہ تک زندہ رہ سکتے ہیں مگر پانی کت بغیر چند دن بھی  گزارنا مشکل ہے۔  انسان ہر دن کافی مقدار میں پانی کا محتاج ہوتا ہے خواہ پینے کی خاطر ہو یا دیگر امور کے لئے۔ ہمارے بدن کا سسٹم، پانی کا محتاج ہے، پانی، گردے کی کارکردگی اور خون کی دوران کو ، بدن میں آسان کرتا ہے اور کھانے کو ہضم کرنے میں مدد کرتا ہے۔

بہت  سی  زندہ مخلوقات، پانی میں زندگی بسر کرتی ہیں اور ان کی زندگی اس پانی سے وابستہ ہوتی ہے۔ پانی کھیتوں کو سیراب کرتا ہے۔ بہت سی بیماریوں کے علاج کے لئے پانی کا استعمال ہوتا ہے۔ صنعت اور ترقی کے امور میں بھی پانی کا اہم کردار ہے جیسے باندھوں (Dam) کو بنا کر، پانی کے دباؤ(پریشر) کے ذریعہ بجلی کا بنانا وغیرہ۔

ایک اہم نکتہ یہ ہے کہ، اس دنیا میں پانی کی مقدارتو  زیادہ ہے مگر سالم اور پینے کے قابل پانی، کم ہے، یہ ایک ایسا مشکل امرہے ، جسکی وجہ سے بہت ممالک کے باشندوں کو تکلیف کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔  

لہذا ضرورت  اس بات کی ہے کہ ہم سب پانی جیسی عظیم نعمت کی اہمیت کو سمجھتے ہوئے اس کی قدر کریں اور کوشش کریں کی ہم اس نعمت کا صحیح استعمال کریں اور اسراف سے بچیں ۔ 

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
حوالے:
[1] ۔ وَجَعَلْنَا مِنْ الْمَاءِ كلّ شَيْءٍ حَيٍّ(انبياء/30)
[2] ۔ سَأَلَ رَجُلٌ أَبَا عَبْدِ اللَّهِ (عليه السلام ) عَنْ طَعْمِ الْمَاءِ ؟ "فَقَالَ : " سَلْ تَفَقُّهاً وَ لَا تَسْأَلْ تَعَنُّتاً ، طَعْمُ الْمَاءِ طَعْمُ الْحَيَاةِ "(کافی، جلد ۶، ص ۳۸۱۔)

Add new comment

Plain text

  • No HTML tags allowed.
  • Web page addresses and e-mail addresses turn into links automatically.
  • Lines and paragraphs break automatically.
2 + 4 =
Solve this simple math problem and enter the result. E.g. for 1+3, enter 4.
www.welayatnet.com
Online: 31