امام علی(علیہ السلام)

تفرقہ امام علی(علیہ السلام) کی نگاہ میں
05/12/2020 - 21:06

خلاصہ: جس قوم و ملت میں افتراق ہو وہ قوم خود با خود تباہ اور برباد ہوکر رہ جاتی ہے۔

دل کی موت اور زند گی امام علی(علیہ السلام) کی نظر میں
05/12/2020 - 02:03

خلاصہ: دنیا کی محبت انسان کے دل کو فاسد کردیتی ہے۔

مولائے کائنات(علیہ السلام) کی مظلومیت
05/11/2020 - 23:50

خلاصہ: امام علی(علیہ السلام) نے کئی مقامات پر اپنے آپ کو مظلوم کہاہے۔

استغفار کا معنی امام علی(علیہ السلام) کی نگاہ میں
05/11/2020 - 19:08

خلاصہ: استغفار، بلند مقام افراد اور صدر نشین اشخاص کا مرتبہ ہے۔

منابع اهل سنت میں امام علی(علیہ السلام) کا حدیث غدیر کے ذریعہ استدلال کرنا
03/03/2020 - 09:47

خلاصہ: امام علی(علیہ السلام) نے اپنی حدیث غدیر کے ذریعہ مختلف مقاموں پر اپنی امامت کی حقانیت کو پیش کیا۔

اتحاد امام علی(علیہ السلام) کی نظر میں
01/07/2020 - 11:56

خلاصہ: حضرت علی(علیہ السلام) مسلمانوں کے درمیان وحدت و اتحاد کو عطیہ الہی کے عنوان سے دیکھتے تھے، جو مسلمانوں کے درمیان الفت و محبت کا سبب بنتا ہے اور مؤمنین اس وحدت و اتحاد کے سائے میں امن و سلامتی حاصل کرتے ہیں یہ ایک ایسی نعمت ہے جس کی قدر و منزلت بہت زیادہ ہے۔

کس کی موت نقصان دہ ہوگی، امام علی(علیہ السلام) کی نظر میں
12/16/2019 - 12:43

خلاصہ: امام علی(علیہ السلام) : میں نے جنت جیسا کوئی مطلوب نہیں دیکھا ہے جس کے طلبگار سب سورہے ہیں اور جھنم جیسا کوئی خطرہ نہیں دیکھا ہے جس سے بھاگنے والے سب خواب غفلت میں پڑے ہوئے ہیں۔

توبہ کے شرائط امام علی(علیہ السلام) کی نظر میں
12/11/2019 - 10:56

خلاصہ: صرف زبان سے "استففر اللہ" کہنے کا نام توبہ نہیں ہے بلکہ حقیقی معنی میں اپنے گناہ سے معافی مانگنے کا نام توبہ ہے۔

افتراق کا نقصان امام علی(علیہ السلام) کی نظر میں
11/09/2019 - 18:09

خلاصہ: جب تک تمام لوگ آپس میں متحد نہیں رہینگے اس وقت تک انسانی دشمن آسانی کے ساتھ ہمارے اوپر قابض ہوسکتا، اس لئے ضرورت اس بات کی ہے کہ انسان زندگی کہ ہر موڑ پر آپس میں پیار اور محبت کے ساتھ رہے۔

افتراق میں شیطان کی جیت
11/09/2019 - 17:14

خلاصہ: امام علی(علیہ السلام): باہمی انتشار و تفرقہ سے احتراز کرکے از سر نو اپنی شیرازہ بندی کی تدبیر کریں کہ یہی عافیت اور سلامتی کا راستہ ہے۔

صفحات

Subscribe to امام علی(علیہ السلام)
www.welayatnet.com
Online: 49